Naya Ek Rishta Paida Kyun Karen Hum- Romantic Shayairy


Naya Ek Rishta Paida Kyun Karen Hum-Best Poetry JAUN ELIYA

Poet: JAUN ELIYA
By: Muhammad Saeed, Sialkot
نیا اک رشتہ پیدا کیوں کریں ہم 
بچھڑنا ہے تو جھگڑا کیوں کریں ہم 

خموشی سے ادا ہو رسم دوری 

کوئی ہنگامہ برپا کیوں کریں ہم 


یہ کافی ہے کہ ہم دشمن نہیں ہیں 

وفا داری کا دعویٰ کیوں کریں ہم 


وفا اخلاص قربانی محبت 

اب ان لفظوں کا پیچھا کیوں کریں ہم 


ہماری ہی تمنا کیوں کرو تم 

تمہاری ہی تمنا کیوں کریں ہم 


کیا تھا عہد جب لمحوں میں ہم نے 

تو ساری عمر ایفا کیوں کریں ہم 


نہیں دنیا کو جب پروا ہماری 

تو پھر دنیا کی پروا کیوں کریں ہم 


یہ بستی ہے مسلمانوں کی بستی 

یہاں کار مسیحا کیوں کریں ہم 

............
Naya Ek Rishta Paida Kyun Karen Ham 
BichhaḌna Hai To Jhagda Kyuun Karen Ham 

ḳhamoshi Se Ada Ho Rasm-E-Dūri 
Koi Hangama Barpa Kyuun Karen Ham 

Yeh Kaafi Hai Ki Hum Dushman Nahi Hain 
Vafa-Dari Ka Da.Ava Kyuun Karen Ham 

Vafa Iḳhlas Qurbani Mohabbat 
Ab In Lafzon Ka Pichha Kyuun Karen Ham 

Hamari Hi Tamanna Kyuun Karo Tum 
Tumhari Hi Tamanna Kyuun Karen Ham 

Kiya Tha Ahd Jab Lamhon Mein Hum Ni
To Saari Umr Iifa Kyuun Karen Ham 

Nahin Duniya Ko Jab Parva Hamari 
To Phir Duniya Ki Parva Kyuun Karen Ham 


Ye Basti Hai Musalmano Ki Basti 
Yahan Kar-E-Masiha Kyuun Karen Ham

Post a Comment

0 Comments